علم قافیہ


سرقاتِ شعری
کسی دوسرے شاعر کو بعینہ یا لفظی و معنوی ادل بدل سے اپنا کر لینا سرقۂ شعری کہلاتا ہے ۔
سرقات شعری کی دو قسمیں ہیں
(1) سرقہ ظاہر
(2) سرقہ غیر ظاہر۔
سرقہ ظاہر کی قسمیں:

(الف) نسخ و انتحال
بعینہ دوسرے شاعر کے شعر کو اپنا کر لینا اور یہ بہت بڑا عیب ہے ۔

(ب) مسخ و اغارہ
لفظی ادل بدل سے دوسرے شاعر کے شعر کو اپنا کر لینا۔ اگر دوسرے شعر کی ترتیب پہلے سے بہتر ہو تو سرقہ نہیں ترقی ہوتی ہے اور یہ جائز ہے ورنہ نہیں۔

(ج) المام سلخ
دوسرے شاعر کے شعر کا مضمون اپنے الفاظ میں ادا کر کے اپنا لینا۔
توارد۔ دو شاعروں کے شعر کا لفظی و معنوی اعتبار سے بلا اطلاع و ارادہ اتفاقاً یکساں ہونا۔ یہ سرقہ نہیں تیزی فکر کے باعث ایسا ہوتا ہے ۔