فہرست
زینتِ حجلۂ عفّت ہیں جنابِ زہراؑ
تا
جب تلک دم ہے بھروں گی یوں ہی دم زہراؑ ک


کس کا زہرہ ہے جو کرے وصفِ جنابِ زہراؑ
تا
اس کی تعظیم رسولؐ دوسَرا کرتے تھے


آپ ہی حق کی کنیزوں میں ہیں مخصوص کنیز
تا
چمنِ خلد تلک جس کی مہک جاتی تھی


راج دربار میں بھگوان کے عزّت پائی
تا
ان کو سردار زنان حق نے بہر طور کی


کس سے تشبیہ دوں زہراؑ کو عجب ہے مرا حال
تا
حق نے بھیجا ہے تمہیں لطف و عنایت کے لیے


کس قدر آپ کا چال و چلن نستعلیق
تا
تم نے عورت کے پردہ کا سر انجام دی


کربلا یاد ہے کچھ تجھ کو قیامت کا وہ دن
تا
غیر توحید و رسالت سے امامت نہ رہے


وصف میں آپ کے مداحوں نے کیا کیا نہ کہ
تا
کیوں نہ ہوں خلق میں جب ایک رہی ہیں زہراؑ


پارسا ایسی کہ حیدرؑ پڑھیں دامن پہ نماز
تا
آج زہراؑ کی ردا دھو کے پلا دے ساقی


وہ پلا کو کہ ہے زہراؑ کی محبت کی شراب
تا
دل میں پر آلِ پیمبرؐ سے ولا رکھتی ہوں


پہلے بھگوان سے پوچھے کوئی لذت اس کی
تا
فاطمہؑ کرتی تھیں باتیں شکمِ مادر میں


آپ پیدا ہوئیں امت کی ہدایت کے لیے
تا
بی بی ڈھان کے ہوئے منہ گھر پڑی رہتی تھیں


باپ کی موت کا ایسا ہوا زہراؑ پہ اثر
تا
چوم لینا مری جانب سے گلا بھائی ک


پھر کہا فخر امامت سے کہ اے شاہِ ہُد
تا
یہ جو روئے گا تو مرقد سے نکل آؤں گی