دستور المرکبات
 

سفوفِ قُلاع
وجہ تسمیہ
’’قلاع ‘‘منھ کے چھالوں کو کہتے ہیں۔ یہ نسخہ ذرور اًمستعمل ہے اور محل استعمال ہی اِس کی وجہ تسمیہ ہے۔

افعال و خواص اور محل استعمال
منھ کے چھالوں اور منھ کی سوزِش میں فائدہ مند ہے۔

جزءِ خاص
کات سفدو

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
گلِ سُرخ، کات سفید، شورہ قلمی دانۂ ہیلِ خرد، ہر ایک ۲ گرام کافور خالص ایک گرام نیلا تھوتھا نصف گرام پہلے نیلے تھوتھے کو توے پر بھونیں ، پھر تمام دوائیں الگ الگ باریک کر کے باہم ملائیں۔

ترکیب استعمال
دِن میں ۲۔۳ مرتبہ ایک ایک گرام سفوف منھ میں لیں اور رال کا افراز ہونے پر اُس کو ٹپکنے دیں۔

سفوف کشتہ قلعی
افعال و خواص اور محل استعمال
جریان و سوزاکِ حاد و مزمن میں مفید ہے۔

جزءِ خاص
کشتہ قلعی

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
ست گلو، ست سلاجیت، اِلائچی خرد، جنطیانہ ، اصل السوس مقشّر، کباب چینی، تالمکھانہ ، طباشیر ، کشتہ قلعی۔سب ادویہ کو ہم وزن لے کر باریک سفوف کریں اور ہم وزن شکر ملاکراستعمال میں لائیں۔

مقدار خوراک
۱۰ گرام ہمراہ آب سادہ۔
نوٹ: کشتہ قلعی کے استعمال کے دوران دودھ کا استعمال کثرت سے کرائیں۔

سفوف گوند کتیرے وال
افعال و خواص اور محل استعمال
جریان، سرعتِ انزال، رِقّت منی اور ضعف باہ میں مفید ہے۔

جزءِ خاص
کتیرا اورصمغ عربی۔

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
سنبل الطیب کہرباء شمعی، مصطگی رومی، گلِ ارمنی، ثعلب مصری، شقاقل مصری، اندر جو شیریں ، پودینہ خشک، جنطیانہ رومی پنیرمایۂ شتر اعرابی لودھ پٹھانی ہر ایک ۳ گرام ،صمغ عربی کتیرا ،گلنار، صندل سفید، طباشیر، موچرس، نشاستہ، خارخسک، مائںا خرد ، کشتہ قلعی ہر ایک ۴ گرام، پوست بیخ مولسری ، پوست بیخ کچنال، پوست بیخ جھربیری، پوست بیخ ببول، سنکھا ہولی، سنگھاڑا خشک ہر ایک ۵ گرام ،دانہ اِلائچی خرد ۶ گرام، تودری سُرخ ، تودری سفید، بہمن سُرخ، بہمن سفید ہر ایک ۹ گرام۔تمام ادویہ کو کوٹ چھان کر سفوف بنائیں اور ہم وزن شکر ملا کر استعمال میں لائیں۔

مقدار خوراک
۵ تا ۱۰ گرام ہمراہ آبِ تازہ یا شیر تازہ۔