دستور المرکبات
 

حب قوقای
وجہ تسمیہ
قوقو یا سریانی زبان میں راس (سَر)کو کہتے ہیں چونکہ یہ حبوب منقی دماغ ہیں۔ اس لئے یہ ’’حبِّ قوقایا‘‘ کے نام سے موسوم ہوئیں۔

افعال و خواص اور محل استعمال
فالج، لقوہ استرخاء اور دوسری بارد بلغمی بیماریوں میں مفید ہے۔

جزءِ خاص
شحمِ حنظِل

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
شحم حِنظل ،صبر زرد، عصارۂ افسنتین، میطگ رومی ہر ایک ۶ گرام سقمونیا ۳ گرام۔ تمام ادویہ کو باریک پیس کر نخودی گولیاں بنائیں۔

مقدار خوراک
۳تا ۵ گرام ہمراہ آب گرم یا عرقیات۔

حب کاکڑا سینگی
وجہ تسمیہ
جزء خاص کے نام سے موسوم ہے۔

افعال و خواص اور محل استعمال
ضیق النفس اورکھانسی میں مفید ہے۔ سعال اطفال میں خصوصیت کے ساتھ مفید و مؤثر ہے۔ نافع امراض بلغمی و ریوی ہے۔

جزءِ خاص
کاکڑاسینگی

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
اصل السوس، فلفل سیاہ ہر ایک ۲۵ گرام جواکھار ۱۲ گرام کاکڑا سینگی ۵۰ گرام۔جملہ ادویہ کو خوب باریک کر کے بقدرِ نخود گولیاں بنائیں۔

مقدار خوراک
بڑوں کو ایک گولی صبح و شام ،بچوں کو نصف گولی ماں کے دودھ میں گھِس کر دیں۔

حب کبد نوشادری
وجہ تسمیہ
یہ گولیاں متعلقہ عضو کے امراض میں استعمال ہونے اور نسخہ میں نوشادر کی شمولیت کی وجہ سے ’’حبِّ کبد نوشادری‘‘ کے نام سے موسوم ہوئیں۔

افعال و خواص اور محل استعمال
ورم جگر ، گرانیٔ معدہ و قبض، ہاضم طعام، کاسر ریاح۔

جزءِ خاص
نوشادر

دیگر اجزاء مع طریقۂ تیاری
نوشادر، نمک طعام، نمک سیاہ، نمک لاہوری، ہلیلہ سیاہ، پوست ہلیلہ کابلی، باؤ بڑنگ، فلفل سیاہ، زنجبیل نرکچور، سہاگہ بریاں۔ تمام ادویہ کو ہم وزن لے کر باریک کوٹ کر چھان لیں۔ پھر عرقِ گلاب میں بقدر نخود گولیاں بنائیں۔

مقدار خوراک
۲ تا ۴ عدد (بعد غذائیں )۔